پروفیسرڈاکٹر محمد عقیل |

مسلمانوں کے ایمان اور اخلاق میں کمزوریوں کی جدید اندازمیں نشاندہی کرنااور اصلاح کے لئے سائنٹفک طرز پر حل تجویز کرنا اس سائٹ کے مقاصد ہیں۔۔۔۔۔۔۔قد افلح من زکھا۔

۔تجسس

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Sunday Jan 9, 2011


ٹائٹل کی آیت: اے ایمان والو ! بہت سے گمانوں سے بچو کیونکہ بعض گمان صریح گناہ ہوتے ہیں۔اور ٹوہ میں نہ لگو(الحجرات۔۴۹:۱۲)
ٹائٹل کی حدیث: ابو ہریرہؓ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺنے فرمایا کہ تم بد گمانی سے بچو اس لئے کہ بدگمانی سب سے زیادہ جھوٹی بات ہے۔اور کسی کے عیوب کی جستجو نہ کرو اور نہ اس کی ٹوہ میں لگے رہو۔۔(بخاری ، جلد سوم:حدیث ۱۰۰۴) پڑھنا جاری رکھیں »


۔بدگمانی

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Sunday Jan 9, 2011


ٹائٹل کی آیت: اے ایمان والو ! بہت سے گمانوں سے بچو کیونکہ بعض گمان صریح گناہ ہوتے ہیں۔اور ٹوہ میں نہ لگو(الحجرات۔۴۹:۱۲)

ٹائٹل کی حدیث: ابو ہریرہؓ سے روایت ہے کہ نبی کریم ﷺنے فرمایا کہ تم بد گمانی سے بچو اس لئے کہ بدگمانی سب سے زیادہ جھوٹی بات ہے۔اور کسی کے عیوب کی جستجو نہ کرو اور نہ اس کی ٹوہ میں لگے رہو۔۔(بخاری ، جلد سوم:حدیث ۱۰۰۴)
کیا آپ جانتے ہیں کہ بدگمانی کسے کہتے ہیں؟
کیا آپ اس مرض سے بچنے کی صلاحیت رکھتے ہیں؟
ان سب باتوں کو جاننے کے لئے مندرجہ ذیل ٹیسٹ کے سوالات کے جواب دے کر اپنے مارکس معلوم کریں پڑھنا جاری رکھیں »


خبر بلا تحقیق مان لینا یا پھیلانا

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Sunday Jan 9, 2011

ٹائٹل کی آیت: اے ایمان والو! اگر تمہارے پاس کوئی فاسق کوئی اہم خبر لائے تو اس کی اچھی طرح تحقیق کرلیا کرو مبادا کسی قوم پر نادانی سے جا پڑو، پھر تمہیں اپنے کئے پر پچھتانا پڑے۔(الحجرات ۴۹:۶)
مفہوم: اس آیت سے مراد یہ ہے اگر خبر کسی معاشرتی ، اخلاقی ، مذہبی یا کسی اور پہلو سے اہمیت کی حامل ہے اور اسکی اشاعت سے دور رس نتائج نکل سکتے ہیں اور اس خبر کا بتانے والا کوئی شریعت کی حدودو قیود سے لاپرواہ کوئی غیر سنجیدہ شخص ہے تو اس خبر کی اشاعت سے قبل اسکی تحقیق کرلینا ضروری ہے۔
کیا آپ جانتے ہیں کہ کونسی خبر کی تحقیق ضروری ہے؟
خبر کی تحقیق سے کیا مراد ہے؟
بلا تحقیق خبر مان لینے یا پھیلادینے کے کیا نقصانات ہیں؟
ان سب سوالات کے لئے ایک چھوٹا سا ٹیسٹ دیجئے۔ پڑھنا جاری رکھیں »


مذاق اڑانا

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Saturday Jan 8, 2011

تزکیۂ نفس کور س

آیت: ’’اے ایمان والو! نہ مردوں کی کوئی جماعت دوسرے مردوں کا مذاق اڑائے ممکن ہے وہ ان سے بہتر ہوں اور نہ عورتیں دوسری عورتوں کا مذاق اڑائیں کیا عجب وہ ان سے بہترنکلیں اور نہ آپس میں ایک دوسرے کو عیب لگاؤاور نہ(ایک دوسرے کو) برے القاب سے پکارو۔ ایمان کے بعد گناہ کا نام لگنا برا ہے۔اور جو توبہ نہ کریں تو وہی ظالم لوگ ہیں‘‘۔(الحجرات۔۴۹:۱۱)
سوالات
کیا آپ مذاق اڑانے اور مزاح کرنے کا فرق جانتے ہیں؟
کیا آپ لوگوں پر طنز کرتے، ان پر پھبتی کستے اور انہیں طعنے دیتے ہیں؟
کیا آپ دوسروں کو کسی ناپسندیدہ نام یا چڑ سے پکارنے کے عادی ہیں؟
گر ان میں سے کسی سوال کا جواب ہاں میں ہے تو آپ ایک بڑے گناہ کے مرتکب ہورہے ہیں۔ اس تحقیر آمیز روئیے کو جاننے اور اس سے بچنے کے لئیدرج ذیل مضمون کا مطالعہ کریں۔

پڑھنا جاری رکھیں »


تمسخریا مذاق اڑانا

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Wednesday Dec 29, 2010


کیا آپ جانتے ہیں کہ کسی کا مذاق اڑانا اسلام میں ممنوع اور اللہ تعالیٰ کے حکم کی صریح خلاف ورزی ہے۔ قرآن میں آتا ہے کہ
’’اے ایمان والو! نہ مردوں کی کوئی جماعت دوسرے مردوں کا مذاق اڑائے ممکن ہے وہ ان سے بہتر ہوں اور نہ عورتیں دوسری عورتوں کا مذاق اڑائیں کیا عجب وہ ان سے بہترنکلیں۔ ‘‘۔(الحجرات۔۴۹:۱۱)
کیا آپ بھی لوگوں کا مذاق اڑاتے ہیں؟ یہ معلوم کرنے کے لئے مندرجہ ذیل سوالواں کے جواب دیجئے۔ پڑھنا جاری رکھیں »


طعنہ زنی، عیب جوئی ، طنز و تشنیع اور پھبتی کسنا

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Wednesday Dec 29, 2010


اللہ تعالیٰ نے ہمیں کسی پر عیب لگانے، طنز کرنے، جملے بازی کرنیاور پھبتی کرنے سے منع کیا ہے ۔ قرآن میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں کہ:
۔۔۔۔اور نہ آپس میں ایک دوسرے کو عیب لگاؤ(الحجرات۔۴۹:۱۱)
’’تباہی ہے ہر اشارے باز عیب جو کے لئے‘‘(الھمزہ۔۱۰۴:۱)
کیا آپ بھی اس مرض میں مبتلا ہیں؟ ذیل کے سوالات کے جواب دیجئے: پڑھنا جاری رکھیں »


برے ناموں سے پکارنا یا چڑ بنانا

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Wednesday Dec 29, 2010

اللہ تعالیٰ نے ہمیں ایک دوسرے کو برے القابات سے پکارنے یا ایک دوسرے کی چڑ بنانے سے منع کیا ہے ۔ قرآن میں اللہ تعالیٰ فرماتے ہیں کہ:
اور نہ(ایک دوسرے کو) برے القاب سے پکارو۔ ایمان کے بعد گناہ کا نام لگنا برا ہے۔اور جو توبہ نہ کریں تو وہی ظالم لوگ ہیں‘‘۔(الحجرات۔۴۹:۱۱)
کیا آپ بھی اس مرض میں مبتلا ہیں؟ ذیل کے سوالات کے جواب دیجئے: پڑھنا جاری رکھیں »


۔غیبت سے بچئے

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Sunday Dec 26, 2010


کیا آپ جانتے ہیں کہ غیبت کیا ہے؟

درج ذیل ٹیسٹ کے ذریعے معلوم کیجئے کہ آپ غیبت کے متعلق کتنا جانتے ہیں اور اس سے کس طرح بچ سکتے ہیں  پڑھنا جاری رکھیں »


حسد-پروفیسر محمد عقیل

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Thursday Dec 2, 2010


ہر اخلاقی برائی نقصان دہ ہے ۔ کبھی یہ نقصان دنیاہی میں نظر آجاتا اور کبھی آخرت تک موقوف ہو جاتا ہے۔ حسد ایک ایسی ہی بیماری ہے جس کا شکار شخص دنیا ہی میں نفسیاتی اذیت اٹھاتا اور دل ہی دل میں گھٹ کر مختلف ذہنی و جسمانی امراض میں مبتلاء ہو جاتا ہے۔یعنی حاسد کی سزا کا عمل اس دنیا ہی سے شروع ہوجاتا ہے۔ اسی وجہ سے قرآن میں حسد کرنے والے کے شر سے اللہ کی پناہ مانگی گئی ہے کیونکہ وہ اس باؤلے پن میں کسی بھی حد تک جاسکتا ہے۔اسی طرح حدیث میں آتا ہے کہ حسد نیکیوں کو اس طرح کھاجاتا ہے جیسے سوکھی لکڑی کو آگ۔ لہٰذا دنیا اور آخرت کی بھلائی کے لئے اس بیماری کو جاننا اور اس سے بچنے کی تدابیر اختیا ر کرنا ضروری ہے۔ پڑھنا جاری رکھیں »


غیبت(پروفیسر محمد عقیل)

شائع ہونے کا وقت اور تاریخ :Saturday Oct 23, 2010


سورۂ حجرات میں غیبت کرنے کو ایک انتہائی ناپسندیدہ فعل قرار دیا گیا ہے۔ یہاں تک کہ اسے اپنے مردہ بھائی کا گوشت کھانے سے تشبیہہ دی گئی ہے۔ غیبت کسی شخص کی غیر موجودگی میں اس کی برائی اور عیب بیان کرنے کا نام ہے۔ وہ برائی جو اس شخص میں موجود ہو۔ اگر کسی کی غیر موجودگی میں اس کے اُن عیوب پر روشنی ڈالی جارہی ہو جو اس میں سرے سے موجود ہی نہ ہوں تو یہ غیبت نہیں بلکہ الزام تراشی اور بہتان تراشی ہوگی، جو غیبت سے بھی بڑا گناہ ہے اور اس پر قانوناً سزا بھی دی جاسکتی ہے۔ حدیث میں ہے کہ لوگوں نے دریافت کیا کہ غیبت کیا ہے؟ پڑھنا جاری رکھیں »